مردعورت میں نفاق:
اول علامت سحر کی یہ ہے کہ میاں بیوی آپس میں محبت و الفت کی زندگی گزاررہے ہیں ، یکا یک مردو عورت میں تنازعہ کی شکل کھڑی ہوجائے اور ایک دوسرے کی شکل سے بھی بیزار ہوجائیں۔
شوہر کی شکل بری لگے:
دوسری علامت یہ ہے کہ عورت اپنے شوہر کی محبت میں فریفتہ ہو اور سحر کر کے اس کی برگشتہ کر دیا جاتا ہے اور وہ شکل دیکھ کر آگ بگولا ہوجاتی ہے۔
عورت نفرت کرے:
؎ تیسری علامت یہ ہے کہ عورت اپنے شوہر کے اوصاف بیان کرتے کرتے نہیں تھکتی بلکہ دن رات شوہر کی محبت کا دم بھرتی ہے مگر سفلی سحر کے ذریعہ اس کوبدظن، متنفر کر دیا جائے اور اس کو شوہر کی شکل مثل کتے ، خنزیر کے نظر آنے لگتی ہے۔

رشتہ سے انکار:
چوتھی علامت سحر کی یہ ہے کہ نوجوان حسین و خوبصورت لڑکی ہونے کے باوجود لڑکے والے لڑکی دیکھ کر اچاٹ ہوجاتے ہیں اور رشتہ سے انکار کر دیتے ہیں اس طرح عرصہ درازگز جاتا ہے۔
رشتے آنا بند ہو جانا:
پانچویں علامت یہ ہے کہ مرد اپنی بیوی بچوں پر محبت میں جان دیتا ہے مگر سحر زدہ ہونے کے بعد نفرت و بغض کرنے لگتا ہے اور سمجھانے والا بھی دشمن لگتاہے۔
مر د نفرت کرے:
چھٹی علامت یہ ہے کہ مرد اپنی بیوی بچوں پر محبت میں جان دیتا ہے مگر سحرزدہ ہونے کے بعد نفرت و بغض کرنے لگتا ہے اور سمجھانے والا بھی دشمن لگتا ہے۔
بچے ضائع ہونا:
ساتویں قسم سحر کی یہ ہے کہ سحر دودھ دینے والے جانوروں اور بچہ جننے والی ماؤں پر کیا جاتا ہے ، خواہ جانور ہوں یا عورتیں، اس کے کرنے کے بعد بچہ پیٹ سے بے وقت ضائع ہو جاتا ہے۔
بچوں کا سوکھنا:
آٹھویں قسم سحر کی یہ ہے کہ سحر کے ذریعے خاص کر اولاد کو نشانہ بنا یا جاتا ہے یعنی نومولود اور شیر خوار بچوں پر یہ سحر کیا جاتا ہے اور وہ سوکھ کر مرجاتے ہیں۔
لڑکیاں پیدا ہونا:
نویں قسم سحر کی یہ ہے کہ دوپہر میں بروز منگل یا جمعہ کو ایک پتلہ بنا کر عورت کے راستے میں ڈال دیتے ہیں وہ پتلہ جس عورت کے پیروں میں آئے گا اس عورت کے ہاں لڑکیاں ہی پیدا ہوں گی لڑکا پیدا نہ ہوگا۔
مباشرت کے قابل نہ رہنا:
دسویں قسم سحر کی یہ ہے کہ مرد کو بستہ کر دیا جاتا ہے یعنی وہ مرد ہمبستری کے قابل نہیں رہتا۔
ہم بستری سے نفرت:
گیارھویں قسم سحر کی یہ ہے کہ دلہن کو اپنے شوہر سے یا جس سے وابستہ کیا ہے اس کے ساتھ ہم بستری سے نفرت ہو جاتی ہے۔
مرد کا بیکار ہونا:
بارھویں قسم سحر کی یہ ہے کہ مر د کے مفاصل (جوڑوں) میں درد پیدا کر دیا جاتا ہے اور مرد بے کار ہو جاتا ہے۔
پیٹ اور سر میں پانی:
تیر ھویں قسم سحر کی یہ ہے کہ مرد اور عورت کے پیٹ میں یا سر میں پانی پیدا ہوجاتا ہے۔
شکل و صورت بھیانک ہونا:
چودھویں قسم سحر کی یہ ہے کہ سحر زدہ ہونے کے بعد عورت رنگ بدلنے لگتی ہے اور تھوڑی دیر کے بعد تبدیلی رونما ہوتی ہے اور شکل و صورت بھیانک ہوجاتی ہے۔
بانجھ پن:
پندرھویں قسم سحر کی یہ ہے کہ عورت کو باندھ د یا جاتا ہے اورعورت عقیمہ (بانجھ ) ہوجاتی ہے ماہواری بھی ہوتی رہتی ہے مگر استقرار حمل نہیں ہوتا ہے۔
ازدواجی رشتے منقطع:
سترھویں قسم سحر کی یہ ہے کہ اس قسم کے ذریعہ ازدواجی رشتہ منقطع کر دیا جاتا ہے اور مرد و عورت جدا جدا ہوجاتے ہیں۔
گھر ویران:
اٹھارھویں قسم سحرکی یہ ہے کہ اس قسم کے ذریعہ کسی گھر کو ویران و بردباد کیا جاتا ہے اس گھر کی خیروبرکت اڑجاتی ہے ، محبت و الفت جاتی رہتی ہے ، ایک دوسرے کو دشمن سمجھنے لگتے ہیں رات دن جھگڑا بنا رہتا ہے۔
بیماری :
انیسویں قسم سحر کی یہ ہے کہ اس سحر کے ذریعہ سے کسی شخص مرد یا عورت کو شدید بیماری میں مبتلا کر دیا جاتاہے اور کسی صورت صحت یاب نہیں ہوتا ہے۔
مرد و زن میں ناچاقی:
بیسویں قسم سحر کی یہ ہے کہ اس سحر کے ذریعہ کسی بھی شخص کو ذلیل کر دیا جاتا ہے ہر کوئی بلاوجہ ان سے نفرت کرنے لگتا ہے کوئی اعتبار نہیں کرتا۔
عہدہ سے معطل:
اکیسویں قسم سحر کی یہ ہے کہ اس سحر کے ذریعہ کسی افسر یا حاکم یا ملازم کو نوکری سے یا افسر کو عہدہ سے ہٹا دیا جاتا ہے سحر زدہ ہونے پر نوکری یا عہدہ سے معطل ہوجاتا ہے۔
فقیرو کنگال:
بائیسویں قسم سحر کی یہ ہے کہ امیر، تاجر ،وزیر کو عہدہ سے گرادیا جاتا ہے اور فقیروکنگال بنا دیا جاتاہے۔
عورت کی بربادی:
تیئسویں قسم سحر کی ہی ہے کہ عورتوں کو اجاڑ دیا جاتا ہے یعنی طلاق دلا دی جاتی ہے جب تک اس سحر کا دفعیہ نہ ہوگا کتنے ہی نکاح کر لیے جائیں سب منقطع ہوتے رہتے ہیں۔
تباد لہ ہونا:
چوبیسویں قسم سحر کی یہ ہے کہ اس قسم کے سحر میں افسر یا حاکم کا تبادلہ کرا دیا جاتا ہے اور شہر سے دور کر دیا جاتا ہے۔
حسن و جمال خراب:
اس قسم کے سحر میں خوبصورت حسین و جمیل عورت کے حسن و جمال کو خراب کر دیا جاتا ہے جس کی وجہ سے وہ اپنے پرایوں میں ذلیل ہو جاتی ہے۔
مکان اجاڑدینا:
اس قسم کے سحر میں ہر ترقی کو روک دیا جاتاہے یہاں تک کہ تعمیر شدہ مکان کو اجاڑ دیا جاتاہے اس گھر میں کوئی آباد نہیں ہو پاتا بلکہ ویران رہتا ہے جو بھی مکان میں آتا ہے جلد ہی بھاگ جاتا ہے۔
دفعیہ آسیب:
جس شخص پر آسیب ہو ان آیتوں کو تین بار پانی پر دم کر کے مریض کے منہ پر چھینٹا ماریں یا کان میں پڑھیں فوراً ہوش آجائے گا۔
افحسبتم انما خلقنکم عبثا و انکم الینا لا ترجعون۔ فتعلی اللہ ا لملک الحق لا الہ لا ھو رب العرش الکریم۔ ومن یدع مع اللہ الھا اخر لا برھان لہ بہ فانما حسابہ عند ربہ۔ (سورۃ المومنون)
جادو سے بندھی قوت مردمی کا علاج:
سورۃ ابراہیم (مکی پارہ نمبر 13) جادو سے بندھی وقت مردمی سے نجات کے لیے بہت مفید ہے۔ اگر کسی شخص کی قوت مردمی سحر کے ذریعہ باندھ دی گئی ہو تو روزانہ تین مرتبہ سورۃ ابراہیم کی تلاوت کرنے سے سحر باطل ہوگا اور اصلی قوت مردمی بحال ہوجائے گی اور اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم سے وہ مرد اپنی اصلی حالت پر آجائے گا۔